حکومت کا سیاستدانوں سے رابطوں کا فیصلہ , اسحاق ڈار کی زیر صدارت وزیراعظم

ہاؤس میں اجلا س
اسلام آباد (نیوز الرٹ رپورٹ)وزیرخزانہ اسحاق ڈار کی زیر صدارت مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماؤں کا اجلاس گزشتہ روز اسلام آباد میں ہوا جس میں فیصلہ کیاگیا کہ پاناما لیکس کے حوالے سے وزیراعظم اور شریف خاندان کا بھرپوردفاع کیاجائے گا،عوام اور تمام سیاسی قوتوں کو ملکی ترقی اور خوشحالی کوسبوتاژ کرنے کے مذموم ایجنڈے کے اثرات سے آگاہ کیا جائے گا اور انہیں اعتماد میں لیا جائے گا۔حکومت نے ہدایت جاری کی کہ وزرا اورارکان پارلیمنٹ ہر سطح پر ان الزامات کا بھرپور جواب دیں ۔گزشتہ روز وزیرخزانہ اسحاق ڈار کی زیر صدارت مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماؤں کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا جس میں وزیر اعلیٰ شہباز شریف،وزیراعظم کی صاحبزادی مریم نواز شریف ،وفاقی وزرا سینیٹر پرویز رشید،لیفٹیننٹ جنرل (ر)عبدالقادر بلوچ، زاہد حامد، خواجہ سعد رفیق،خواجہ محمد آصف،اٹارنی جنرل اشتراوصاف ،سینیٹر مشاہد اﷲ ،سابق گور نر کے پی کے سر دار مہتاب احمد خان اوردیگر ر ہنما ؤں نے شرکت کی۔اجلاس میں وزیراعظم نواز شریف کی مکمل اور جلد صحت یابی کیلئے دعا کی گئی،اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اپوزیشن کی جانب سے مذموم مقاصد کی خاطر وزیراعظم کی ذات اور خاندان پر لگائے جانے والے مضحکہ خیز الزامات کا ہر فورم پر جواب دیا جائے گا۔اجلاس کے شرکا کا کہناتھا کہ مسلم لیگ ن نے اس سے پہلے بھی اس طرح کی تمام سازشوں اور سازشی عناصر کا مقابلہ کیا اور اس میں سرخرو ہوئے اور اس مرتبہ بھی تمام سیاسی اور قانونی محاذوں پر ان سازشوں کا مقابلہ کیا جائے گا۔اجلاس کے شرکا نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ ایک مرتبہ پھر پاکستان کے اقتصادی ایجنڈے اور عوامی ترقی اور تعمیر کے سفر کو سبوتاژ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ حکومت نے سیاستدانوں سے رابطوں کیلئے مشاورتی کمیٹیا ں تشکیل دے دی ہیں جن کو مختلف سیاسی رہنماؤں سے ملاقات کرکے انہیں اعتماد میں لینے کا ٹاسک دیا گیا ہے ۔اس ضمن میں عبدالقادر بلوچ اور مشاہد اللہ آج متحدہ قومی موومنٹ کے رہنما فاروق ستار سے ملاقات کریں گے ،دونوں رہنما مسلم لیگ ق کے صدر چودھری شجاعت سے بھی ملیں گے ۔مشاہد اللہ اور پرویز رشید محمود اچکزئی سے ملاقات کریں گے ،سعد رفیق اور پرویز رشید سراج الحق اور آفتاب شیر پائو سے ملاقات کریں گے ،وزیر خزانہ اسحاق ڈار پیپلز پارٹی کی قیادت سے رابطہ کریں گے ۔تحریک انصاف کے ساتھ مذاکرات کا ٹاسک وزیر داخلہ چودھری نثار کو دیا گیا ہے ،اٹارنی جنرل اشتر اوصاف کوسپریم کورٹ بار کے رہنمائوں سے ملاقاتوں کی ڈیوٹی دی گئی ہے ۔وزیراعظم ہاؤس میں ہونیوالے اجلاس میں وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے شرکا کو وزیراعظم نواز شریف کی جانب سے دی جانے والی ہدایات پہنچاتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نواز شریف نے ہدایت کی ہے کہ سازشیوں کو اہمیت نہ دی جائے اور اس پر وقت ضائع کرنے کے بجائے پوری توجہ ملکی ترقی کے منصوبوں کو مکمل کرنے پر دی جائے ۔اجلاس میں فیصلہ کیاگیا کہ حکومت اپنے اہداف پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے کام جاری رکھے گی، میگاپراجیکٹس اور دیگر منصوبوں کی جلد تکمیل کیلئے کوشش کی جائے گی۔ ذرائع کو معلوم ہوا ہے کہ حکومت نے ثبوت اکٹھے کرلئے ہیں کہ آف شور کمپنیوں کیلئے پاکستان سے پیسے نہیں گئے ،یہ ثبوت حسن نواز اور حسین نواز خود کمیشن میں پیش کریں گے ، توقع کی جارہی ہے حکومت ون پوائنٹ ایجنڈے پر تحریک انصاف کے سوا دیگر جماعتوں کو راضی کرلے گی، تحریک انصاف مذاکرات پر راضی ہوگئی تو ٹھیک بصورت دیگر اسے سیاسی طور پر تنہا کر دیاجائے گا اور پوری قوم کو پیغام دیا جائے گا کہ تحریک انصاف دھرنا ٹو سیاست کرنے جارہی ہے جسے متعدد حلقوں کی آشیر باد حاصل ہے ۔

جواب دیں

Please enter your comment!
Please enter your name here

67 − 60 =